• تازہ ترین

    منگل، 17 اگست، 2021

    اپنی پسند کی شادی کرنے سےروکناغیرکانونی ہے۔

    اپنی مرضی کی پسند سے نکاح کرنے سے کسی کو روکنا غیر قانونی ہے۔ جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ پاکستان میں کافی لوگ اپنے بچوں کو مرضی سے شادی نہیں کرنے دیتے اور اپنی مرضی سے اُن کا نکاح کسی اور سے کروا دیتے ہیں۔لیکن اب یہ کام کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

    Beautiful Pakistani couple


    اسلام میں بھی اپنی پسند کی جگہ پر شادی کرنے کا حکم ہے۔ خوا وہ لڑکا ہو یا لڑکی سب کو اپنی پسند کی جگہ پر نکاح کرنے کی مکمل اجازت ہے اور یہ اُن کا حق بھی ہے۔ اگر کوئی شخص اپنی اولاد کو اگر بغیر اُس کی مرضی سے نکاح پڑوا دیتا ہے تو وہ شخص اسلام کے مطابق بہت بڑا گناہ کر رابا ہے۔

    چونکہ پاکستان ایک اسلامی ملک ہے اِس لیے یہاں پر اسلامی قانون نافذ کرنا ہماری اولین ترجیع ہونے چاہیے۔ اسی کو مدِنظر رکھتے ہوئے لاہور ہائی کورٹ نے یہ فیصلہ جاری کیا کہ اگر کوئی شخص کسی کو اپنی پسند کی جگہ پر نکاح کرنے سے روکتا ہے تو وہ گناہ کا تو مرتکب ہو گا ساتھ ہی ساتھ اُس کے خلاف قانونی کاروائی کی کی جائے گی۔

    اِس لیے کسی کو بھی اپنی پسند کی جگہ پر شادی کرنے سے مت روکیں۔

     اگر کوئی شخص شادی سے روکتا ہے تو وہ غیر قانونی کام قرار دیا جائے گا اور اِس کے خلاف سزا سنائی جائے گی۔اگر کوئی آپ کے ساتھ ایسا کرے تو آپ اپنے قریبی تھانہ میں میں جا کر ساری صورتحال سے آگاہ کیجئے اور اپنی رپورٹ درج کرائیں۔


    • Blogger Comments
    • Facebook Comments

    0 کمنٹس:

    ایک تبصرہ شائع کریں

    Item Reviewed: اپنی پسند کی شادی کرنے سےروکناغیرکانونی ہے۔ Rating: 5 Reviewed By: Saith awab
    Scroll to Top